Home / World / سعودی عرب کا نیا حیرت انگیز منصوبہ ،آخراس میں کیا ہوگا؟

سعودی عرب کا نیا حیرت انگیز منصوبہ ،آخراس میں کیا ہوگا؟

 

NEOM PROJECT SAUDI ARABIA

 

 سعودی عرب اب اسی سمت میں آگے بڑھ رہا ہے۔ تبدیلی کے اس عمل کی قیادت سعودی عرب کے جواں سال ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کر رہے ہیں۔ تیل پر انحصار کم کرنے کے لیے، مملکت میں تجارت، صنعت، سیاحت اور دیگر پیداواری سرگرمیوں کو فروغ دینے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔ ایک نئے شہر NEOMکی منصوبہ بندی بھی کی گئی ہے۔ یہ نام انگریزی کے لفظ نیو اور عربی کے حرف م کو ملاکر رکھا گیا ہے۔ یہاں ’’م‘‘ مستقبل کی نمائندگی کر رہا ہے۔ اس طرح نیوم کا مطلب ہے نیا مستقبل۔ ساحل سمندر، پہاڑ اور صحرا پر مشتمل خطے میں بسایا جانے والا یہ شہر اردن اور مصر کی سرحدوں کے ساتھ 500ارب ڈالر کی لاگت سے 26ہزار پانچ سو مربع کلو میٹر پر تعمیر کیا جائے گا۔ واضع رہے کہ پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی کا رقبہ3527مربع کلومیٹر ہے۔ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے ویژن 2030کے تحت تعمیر کیے جانے والے اس شہر میں توانائی، خواراک، پانی کے علاوہ بائیو ٹیکنالوجی، ڈیجیٹل سائنس، میڈیا پروڈکشن کی سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔ یہ شہر تفریح اور سیاحت کا بڑا مرکز ہوگا۔ سعودی عرب اور مصر کے درمیان ایک بڑے پُل کی تعمیر سے نہ صرف دو ملکوں بلکہ براعظم ایشیا اور افریقہ کو آپس میں ملانے کا منصوبہ بھی ہے۔ ایک خاص بات یہ ہے کہ سعودی عرب کے مروجہ قوانین اس شہر پر لاگو نہیں کیے جائیں گے۔ نیوم کے لیے علیحدہ قوانین ہوں گے۔نیوم کی تعمیر اور دیگر شعبوں میں اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری سے خطہ کے دیگر ممالک کو بھی فائدہ ہوگا۔ تعمیرات اور دیگر کئی شعبوں میں اگلے دس برسوں میں ہنر مند اور غیر ہنر مند لاکھوں افراد کی ضرورت ہوگی۔ سعودی عرب کی تعمیر و ترقی میں لاکھوں پاکستانیوں نے بہت اہم کردار ادا کیا ہے۔ حکومتِ پاکستان کی بروقت اور مناسب توجہ سے نیوم کی تعمیر میں بھی لاکھوں پاکستانیوں کے لیے وسیع مواقع فراہم ہوسکتے ہیں

یہ بھی پڑھیں۔

سعودی عرب کانیوم منصوبہ